Haalim Episode 12 – Nimrah Ahmed

Haalim Episode 12
<< Haalim Episode 11

Haalim Episode 12 by Nimrah Ahmed Novel Namal

April 2018

Namal by Nimrah Ahemd Novel haalim probably the most readable Novel round Pakistan and the remainder of the world “haalim episode 12” – By  Nimrah Ahmed april 2018, as a result of Earlier Haalim Episodes have been additional atypical with there story thus now Episode 12 For the Month of April. examine to the final episode this episode can be extra fascinating to learn haalim episode 12.

READ Haalim episode 12 under 

read haalim episode 11 click here

 


































































































Haalim Episode 12 – Nimrah Ahmed

Essentially the most readable Novel by ladies across the nation Pakistan and different Pakistan neighborhood.

” though this can be true this episode will go excessive rank this time ”

correspondingly haalim Episode 12 Sultaan saaz (The Kingmaker) comparatively extra intresting which has the character of peer e kamil Nimrah’s character based mostly. “Episode 12” Of Haalim can be launched and readable right here on fifth April right here Insha-ALLAH.

Haalim Episode 12

“Haalim Episode 12 april 2018”

حالم کے گیارہویں باب “وقت کے اس پار ” پر اجالا خورشید کا خوبصورت تبصرہ

کھو گئے تھے جو تین مسافر
اور کھو کے ان بھول بھلیوں میں
پا لیا تھا انہوں نے خود کو
!اور ایک دوسرے کو.

شہزادی اور ایڈم دی سچا مورخ

،پہنچے ہیں جزیرے پر
“جہاں ملتے ہیں تین چاند”
اور ایسے وہ ملتے ہیں کہ ساحرہ کو بھی مسحور کرتے ہیں ۔
“نہیں لکھا مورخ نے ابھی اسے “پسونا
تو کیا ابھی یہ ہے تاریخ میں ہونا؟
پا لیا بالآخر اس نے وہ خزانہ
!جس کا تھا اسے ہمیشہ سے خیال چمکتا سونا
مگر نہیں اب نہیں ہے اس کی نیت خراب
کیونکہ اس نے اپنا ذاتی خزانہ چھپا رکھا ہے جناب۔
جانتی ہے دشمن کو خوب ہرانا
نہیں کھاتے دشمن پہ ترس جب جنگ شروع ہوجائے
اور کرتے ہیں سیدھی بات جب جینا مشکل ہوجائے۔

ساتھ ہے معصوم سچا مورخ
ٹوٹا ہے جس کا دل توانکو بھی جانتے ہیں ۔
“تحریر میں جان بچانے کی طاقت ہوتی ہے سادونگ”
ہے قلم کس قدر ضروری، یہ تو ہم بھی اب مانتے ہیں ۔
کھٹکتا ہے کچھ تو اس کو
جب توانکو اس سے بات نہیں کرتے۔
مگر وہ قلم کار ہے تو دل کی باتیں دل میں ہی رکھ لیتا ہے۔
مگر اصل میں توانکو تھے اسی سے مخاطب
اس ای میل میں اس خط میں ۔۔۔
،جو لکھا پیارے غلام نے
“جسے شہزادی تاشہ نے قید سے آزاد کردیا تھا”

Novel Haalim Sultaan Saaz

episode 12

فاتح دی خودغرض توانکو
،جس نے ثابت کیا خود کو بے غرض غلام
پی لیا وقت کے بے ذائقہ زہر کا پیالہ
کہ بھول نہ جائیں وہ دونوں جو ہے سیکھا۔
جو قید میں مار کھا کے بھی مسکراتا ہے
،کیونکہ زخم خود ہی بن جاتے ہیں مرہم جب کوئی”اپنا” نظر آجاتا ہے
قید تھی کیسی اک “غلام” کی
کہ جس سے چھڑایا اسے غلاموں نے ہی
نہیں جاتی رائیگاں محنت اور سچی نیت کبھی بھی
بھلے اس کا اجر نہ ملے ابھی
کرسی جو کی پیش اس کو راجہ نے
تو کیے پھر “مذاکرات ” سیاستدانان نے۔
ہوئی اک “ڈیل” جو کر گئی پریشان ۔

سیرئیسلی”اور “توانکو”وقت کے سکھائے یہ دو ہی لفظ”
یاد ہیں ایک کو مگر دوسرے کو بھول گئے۔
کیسی تھی آخر یہ قربانی
اور کچھ نہیں مگر “یادوں ” کی
اور ہم نے جانا کہ دکھ ہے برابر
.یادیں کھو جائیں یا کھو جائیں لوگ۔
It’s very LONELY on the prime!!!

21 thoughts on “Haalim Episode 12 – Nimrah Ahmed

Leave a Reply